طوفان بپر جوائے کا خطرہ: گھروں میں کیا سامان موجود ہونا چاہیے؟ احتیاطی تدابیر جانیں

291

بحیرہ عرب میں بننے والا سمندری طوفان بپر جوائے منگل کی دوپہر تقریباً 12 بجے کے قریب کراچی سے 470 کلومیٹر دوری پر ریکارڈ کیا گیا ہے۔

این ڈی ایم اے کی رپورٹ کے مطابق یہ طوفان 140 سے 150 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے آگے بڑھ رہا ہے جب کہ طوفان کے اثرات کراچی پر نمودار ہونا شروع ہوگئے ہیں، اسی کے پیشِ نظر سندھ کی ساحلی پٹی سے لوگوں کا انخلا جاری ہے۔

چونکہ سمندری طوفان بپرجوئے تیزی سے کراچی اور سندھ کے دیگر ساحلی علاقوں کی جانب بڑھ رہا ہے، اس کے لیے ضروری ہے کہ فوری طور پر کچھ احتیاطی تدابیر اختیار کرلی جائیں۔

فوری احتیاطی تدابیر:

* گاڑیوں میں فیول کی ٹنکی فُل کروالیں، اس کے علاوہ کچھ پیٹرول گھر پر بھی لاکر رکھ لیں۔

* ضروری اشیاء جیسے کھانے پینے کی چیزیں (راشن)، پانی، فرسٹ ایڈ کٹس اور ٹارچز وغیرہ پہلے ہی گھروں میں رکھیں۔

* اگر آپ کے گھروں میں پالتو جانور ہیں، تو انہیں گھر کے اندر کمروں میں رکھیں، باہر بالکونی یا چھت پر ہرگز نہ جانے دیں۔

* بہت سے افراد قربانی کے جانور لے آئے ہیں یا اجتماعی قربانی والے افراد  جانوروں کو ایک مضبوط پناہ گاہ یا چار دیواری میں رکھیں۔

طوفان کے دوران اپنائی جانے والی احتیاطی تدابیر:

* طوفان کے دوران گھروں کی کھڑکیوں کو کسی چٹائی یا چادر سے ڈھک دیں یا پھر ماسکنگ ٹیپ لگائیں تاکہ کھڑکیاں نہ کُھل سکیں۔

* طوفان کے دوران کھڑکیوں سے دور رہیں اور بجلی کے آلات کو منقطع کریں۔