Blog Page 6

والدین

ایک بار ایک باپ اپنے بیٹے سے ملنے شہر جاتا ہے۔ وہاں اس کے بیٹے کے ساتھ ایک خوبصورت لڑکی بھی رہتی ہے۔ تینوں ڈنر کی ٹیبل پر بیٹھ جاتے ہیں پاپا : بیٹا تمہارے ساتھ یہ لڑکی کون ہے؟بیٹا : پاپا، یہ لڑکی میری روم پارٹنر ہے، اور میرے ساتھ ہی رہتی ہے ۔بیٹا : مجھے پتہ ہے کہ آپ کیا سوچ رہے ہوں گے ۔

ہم دونوں کے درمیان کوئی ایسا ریلیشن نہیں ہے پاپا۔ ہم دونوں کے کمرے بھی مختلف ہیں، اور ہم لوگ الگ الگ ہی سوتے ہیں۔ ہم لوگ صرف اچھے دوست ہیں۔پاپا : ۔ اچھا بیٹا … !!دوسرے دن اس کے پاپا واپس چلے جاتے ہیں ایک ہفتے بعد لڑکی : ۔ سنو، گزشتہ سنڈے تمہارے پاپا نے جس پلیٹ میں

ڈنر کیا تھا، وہ پلیٹ غائب ہے۔مجھے تو شک ہے کہ پلیٹ تمہارے پاپا نے ہی چوری کی ہوگی ۔۔۔.. !!آدمی : ۔ شٹ اپ … !!یہ تم کیا کہہ رہی ہو؟لڑکی : ۔ آپ ایک بار اپنے پاپا سے پوچھ تو لو، پوچھنے میں کیا حرج ہے؟؟آدمی : ۔ او کے ۔۔۔.. !!آدمی اپنے پاپا کو ای میل لکھ کر بھیجتا ہے:ڈیر پاپا!! میں یہ نہیں کہہ رہا ہوں کہ آپ نے پلیٹ چوری ۔میں یہ بھی نہیں کہہ رہا ہوں کہ آپ نے پلیٹ چوری نہیں کی ۔اگر آپ غلطی سے پلیٹ لے گئے ہوں تو

پلیز آپ اسے واپس کر دیں، کیونکہ وہ اس لڑکی کی پلیٹ ہے ، اس کے پاپا اسے ایک گھنٹے کے بعد جواب بھیجتے ہیں:ڈیربیٹا! میں یہ نہیں کہہ رہا ہوں کہ تمہاری روم پارٹنر تمہارے ساتھ سوتی ہے ۔میں یہ بھی نہیں کہہ رہا ہوں کہ وہ تمہارے ساتھ نہیں سوتی۔اگر اس پورے ہفتے میں وہ لڑکی ایک بار بھی اپنے کمرے میں اپنے بیڈ پر سو جاتی تو تکیے کے نیچے ہی اسے پلیٹ مل جاتی جو میں نے چھپائی تھی۔ تیرا باپکبھی بھی اپنے آپ کو والد محترم سے زیادہ ہوشیار ،عقلمندمند اور پڑا لکھا مت سمجھیں کیوں کہ والد چاہے جتنا مرضی انپڑھ ہی کیوں نہ ہو لیکن آپ سے زیادہ ہوشیار اور عقلمند ہوگا اور باقی معاملوں میں بھی۔اس لیے اپنے والدین کی قدر کرو اور انہیں عزت دو

MobiKwik Removed From Google Play for Aarogya Setu Link in App: CEO

MobiKwik has been removed from the Google Play store, because of a violation of the app store’s ads policy. According to MobiKwik co-founder and CEO Bipin Preet Singh, this was done because the app has a link to the Aarogya Setu app. Singh said in an interview that MobiKwik received a warning from Google a week ago for promoting Aarogya Setu, but then it said this was a mistake when contacted by MobiKwik. However, after this, the app was removed from Google Play.

Singh tweeted that MobiKwik and other fintech firms were asked to include the link to Aarogya Setu by the Reserve Bank of India (RBI) as part of a very enthusiastic push to drive installs of the contact tracing app, which has been downloaded more than 10 crore times. You can see that other apps such as Paytm also include links to Aarogya Setu, on both Android and iOS apps.

“App was removed because we had a link to Aarogya Setu app,” Singh explained over an email to Gadgets 360. “They gave us a warning one week ago and we explained that we have been asked to do this. Then today they first removed it around 3 pm IST and then we pursued their team and resubmitted the app after removing the link to Aarogya Setu and now they made it live.”

“Google clarified that there is no harm in promoting Aarogya Setu app on MobiKwik, however, they removed our app today from the Play Store without any intimation,” Singh said.

A fresh version of the app is now available on Google Play. This version does not have Aarogya Setu in the links below anymore, Singh confirmed. “The entire experience is arbitrary and has no logic because so many other apps have the same link,” Singh said.

The updated version of the MobiKwik app has removed the Aarogya Setu link.

Google does have policies against apps that contain deceptive or disruptive ads and those which aren’t clearly labelled. However, if that is the reason why the MobiKwik app was removed from Google Play, then we must ask why other apps which also promote Aarogya Setu are being allowed on the store. Gadgets 360 has written to Google for confirmation and will update the copy once we get a response.

Redmi Display 1A Monitor With 23.8-Inch Full-HD IPS Screen Launched

Xiaomi has been in the news for its multiple launches this week. The smartphone maker launched the Redmi 10X series in China, along with new models of the Redmi Smart TV and new RedmiBook laptops. While the majority of these launches took place in China, back in India the company launched an 18W dual-port charger and a precision screwdriver kit. The company also teased RedmiBook and Mi branded laptops for India. Now, the company has now launched a monitor called the Redmi Display 1A in China.

Redmi Display 1A price

The Redmi Display 1A monitor has been silently introduced by the company on its official website. The new Redmi Display 1A is priced at CNY 499 (roughly Rs. 5,300) that is quite aggressive. It looks like Xiaomi is taking pre-orders for the device with a deposit of CNY 100 (roughly Rs. 1,100) but the product status is temporarily unavailable.

Redmi Display 1A specifications

This is the first time Xiaomi has ventured into the PC component space. The new Redmi Display 1A has a 23.8-inch full-HD IPS LCD panel. It has very thin bezels on three sides with the bottom chin being comparatively thicker. Xiaomi claims that the monitor is 7.3mm at its thinnest point. The monitor has a 178-degree field of view and is TUV Rheinland-certified for low blue light emissions.

The Redmi Display 1A has 16:9 aspect ratio, 60Hz refresh rate, 250cd/m² brightness, 1000: 1 contrast ratio and 6ms response time. This monitor also carries 3 years of warranty. It has a power button and power inlet port at the back along with VGA and HDMI ports. Since the monitor has thin bezels, Xiaomi suggests that it can be used for a multi-monitor setup.

مشروط طلاق

ایک شخص کسی بات پر اپنی بیوی سے ناراض ہوا اور قسم کھا کر کہا کہ ’’جب تک تو مجھ سے نہ بولے گی میں تجھ سے کبھی نہ بولوں گا. ‘‘عورت تند مزاج تھی اس نے بھی قسم کھا لی اور وہی الفاظ دہرائے جو شوہر نے کہے تھے. اس وقت غصہ میں کچھ نہ سوجھا مگر پھر خیال آیا تو دونوں کو نہایت افسوس ہوا. شوہر مایوس ہو کر امام ابو حنیفہؒ کی خدمت میں حاضرہوا کہ آپ کوئی تدبیر بتائیے. امام صاحبؒ نے فرمایا ’’ جاؤ شوق سےباتیں کروکسی پر کفارہ نہیں ہے.سفیان ثوریؒ کو معلوم ہوا تو نہایت برہم ہوئے اور امام ابو حنیفہؒ سے جا کر کہا آپ لوگوں کو غلط مسئلے بتا دیا کر تے ہیں.

امام صاحبؒ سفیان ثوریؒ کی طرف مخاطب ہوئے اور فرمایا ’’جب عورت نے شوہر کو مخاطب کر کے قسم کے الفاظ کہے تو عورت کی طرف سے بولنے کی ابتدا ہو چکی، پھر قسم کہاں باقی رہی؟ ‘‘ سفیان ثوریؒ نے کہا ’’ حقیقت میں آپ کو جو بات وقت پر سوجھ جاتی ہے ہم لوگوں کا وہاں تک خیال بھی نہیں پہنچتا.

بس میں نکاح

لاہور ﺳﮯ ﮐﺮﺍﭼﯽ ﺑﺲ ﺟﺎ ﺭﮨﯽ ﺗﮭﯽ ﺟﺐ ﺑﺲ ﺳﭩاپ ﺳﮯ ﭼﻞ ﭘﮍﯼ ﺗﻮ ﻓﺮﻧﭧ ﺳﯿﭧ ﭘﺮ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﺍﯾﮏ ﺑﺰﺭﮒ ﺟﻮ بہت ﺍﭼﻬﮯ ﮐﭙﮍﮮ ﭘﮩﻨﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺗﮭﺎ ﮐﻬﮍے ﮨﻮ گئے ﺍﻭﺭ ﺑﺎﻗﯽ ﻣﺴﺎﻓﺮﻭﮞ ﺳﮯ ﻣﺨﺎﻃﺐ ﮨﻮ ﮐﺮ ﮐﮩﺎ ” ﻣﯿﺮﮮ ﺑﻬﺎﺋﯿﻮ ﺍﻭﺭ ﺑﮩﻨﻮ ﻣﯿﮟ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﻬﮑﺎﺭﯼ ﯾﺎ ﮔﺪﺍﮔﺮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﮞ ﺍﻟﻠﮧ ﻧﮯ ﻣﺠﻬﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﻧﻌﻤﺘﻮﮞ ﺳﮯ ﻧﻮﺍﺯﺍ ﮨﮯ ﻣﮕﺮ ﻣﯿﺮﯼ ﺑﯿﻮﯼ ﺍﯾﮏ ﻣﻮﺯﯼ ﻣﺮﺽ ﺳﮯ اللہ کو پیاری ﮨﻮ ﮔﺌﯽ ﮐﭽﻬ ﺩﻥ ﮔﺰﺭے اور ﻣﯿﺮﯼ ﻓﯿﮑﭩﺮﯼ ﻣﯿﮟ ﺁﮒ ﻟﮓ ﮔﺌﯽ ﻣﯿﮟ ﺩﺭﺁﻣﺪ ﺍﻭﺭ ﺑﺮﺁﻣﺪ ﮐﺎ ﮐﺎﺭﻭﺑﺎﺭ ﮐﺮﺗﺎ ﮨﻮﮞ۔ ﻣﯿﺮﺍ ﺗﯿﺎﺭ ﺷﺪﮦ ﺳﺎﺭﺍ ﻣﺎﻝ ﺟﻞ ﮐﺮ ﺧﺎﮐﺴﺘﺮ ﮨﻮ ﮔﯿﺎ پھر ﮐﭽﻬ ﻣﺪﺕ ﮔﺬﺭﯼ ﮐﮧ ﻣﺠﻬﮯ ﺩﻝ ﮐﺎ ﺩﻭﺭﮦ ﭘﮍﺍ ﺭﺷﺘﮧ ﺩﺍﺭﻭﮞ نے ﺟﺐ ﯾﮧ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﮐﯿﺎ ﮐﮧ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺑﺮﮮ ﺩﻥ ﺁﻧﮯ ﻟﮕﮯ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻨﮯ ﮨﻢ ﺳﮯ ﺭﺍﺑﻄﮧ ﻣﻨﻘﻄﻊ ﮐﺮ ﻟﯿﺎ ﮈﺍﮐﭩﺮﻭﮞ ﻧﮯ ﻣﯿﺮﮮ ﺑﭽﻨﮯ ﮐﯽ ﺿﻤﺎﻧﺖ ﮐﻢ ﮨﯽ ﺩﯼ ﮨﮯ۔

ﻣﯿﺮﯼ ﯾﮧ ﺟﻮﺍﻥ ﺑﯿﭩﯽ ﮨﮯ ﺍﺱ کا ﮐﻮﺋﯽ ﻭﺍﺭﺙ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮨﮯ ﮔﺎ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺩﺍﻣﻦ ﻋﺼﻤﺖ ﮐﻮ ﺗﺎﺭ ﺗﺎﺭ ﻧﮧ ﮐﺮﮮ ﯾﮩﯽ ﻏﻢ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮐﻬﺎﺋﮯ ﺟﺎ ﺭﮨﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﺷﺨﺺ ﮐﯽ ﮨﭽﮑﯽ ﺑﻨﺪﻫ ﮔﺌﯽ ﯾﮧ ﺟﻮﺍﻥ ﺳﺎﻝ ﻟﮍﮐﯽ ﺟﻮ ﭘﺎﺱ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﭩﻬﯽ ﺗﻬﯽ ﺍٹھی ﺍﻭﺭ ﺑﺎﭖ ﮐﻮ سہارا دے ﮐﺮ ﺳﯿﭧ ﭘﺮ ﺑﯿﭩﮭﺎ ﺩﯾﺎ ﺑﺲ ﮐﯽ ﭘﭽﮭﻠﯽ ﺳﯿﭧ ﺳﮯ ﺁﺩﻣﯽ ﮐﻬﮍﺍ ﮨﻮﮔﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﺎ ﻣﯿﺮﮮ 2 ﺑﯿﭩﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﮨﮯ ﺍﺱ ﮐﺎ ﻧﮑﺎﺡ ﮨﻮ ﭼﮑﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺩﻭﺳﺮﺍ ﯾﮧ ﺟﻮ ﺍﺱ ﺷﺨﺺ ﮐﮯ ﺁﮔﮯ ﺑﯿﭩﻬﺎ ﮨﻮﺍ ہے، ﺍﻧﺠﯿﻨﺌﺮ ﮨﮯ ﺍﺱ ﮐﮯ لیے ﺩﻟﮩﻦ ﮐﯽ ﺗﻼﺵ ﮨﮯ ﻣﯿﮟ ﺍﺱ ﺑﺰﺭﮒ ﺳﮯ ﺩﺭﺧﻮﺍﺳﺖ ﮐﺮﺗﺎ ﮨﻮﮞ ﮐﮧ ﯾﮧ ﺍﭘﻨﯽ ﺑﯿﭩﯽ ﮐﺎ ﻧﮑﺎﺡ ﻣﯿﺮﮮ ﺍﺱ ﺑﯿﭩﮯ ﺳﮯ ﮐﺮ ﺩﮮ ﻣﯿﮟ ﻭﻋﺪﮦ ﮐﺮﺗﺎ ﮨﻮﮞ ﮐﮧ ﺍﺱ ﺑﭽﯽ ﮐﻮ ﮐﺒﮭﯽ ﺑﺎﭖ ﮐﯽ ﮐﻤﯽ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﻧﮯ ﺩﻭﮞ گا۔لڑکا کھڑا ﮨﻮ ﮔﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﮐﮩﺎ ﻣﺠﮭﮯ ﺭﺷﺘﮧ ﻗﺒﻮﻝ ﮨﮯ بس میں موجود ﺍﯾﮏ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﮐﻬﮍﮮ ﮨﻮﮐﺮ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﮯ ﯾﮧ ﺳﻔﺮ بہت ﻣﺒﺎﺭﮎ ﺳﻔﺮ ﮨﮯ ﻧﮑﺎﺡ ﺟﯿﺴﺎ ﻣﻘﺪﺱ ﻋﻤﻞ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ وہ بھی سفر میں اس سے اچھی بات کیا ہو گی؟؟

اگر ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﻮ ﺍﻋﺘﺮﺍﺽ ﻧﮧ ﮨﻮ ﺗﻮ ﻣﯿﮟ ﻧﮑﺎﺡ ﭘﮍﻫا دوں؟ ﺳﺐ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﮯ ﻣﺎﺷﺎﺀﺍﻟﻠﮧ ﺳﺒﺤﺎﻥ ﺍﻟﻠﮧ اﻟﺤﻤﺪ ﻟﻠﮧ ﻭﻏﯿﺮﮦ ﻭﻏﯿﺮﮦ ” ﺍﻭﺭ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﻧﮯ ﻧﮑﺎﺡ ﭘﮍﻫا دیا ﺍﯾﮏ اور ﺻﺎﺣﺐ ﮐﻬﮍﮮ ﮨﻮ گئے ﺍﻭﺭ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﮯ ﻣﯿﮟ ﭼﻬﭩﯽ ﭘﮧ ﺟﺎﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ ﺍﭘﻨﮯ ﮔﻬﺮ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﮯ لیے ﻟﮉﻭ لے کر مگر ﺍﺱ ﻣﺒﺎﺭﮎ ﻋﻤﻞ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﻬ ﮐﺮ ﺳﻤﺠﮭﺘﺎ ﮨﻮﮞ کہ لڈو ادھر ہی تقسیم کر دیں اس نے دولہن کے باپ سے مخاطب ہوتے ہوے کہادولہن کے باپ نے ڈرائیور سے کہا ڈرئیور میاں 5 منٹ کسی جگہ بس روک دینا تاکہ سب مل کر منہ میٹھا کر لیں، ڈرائیور نے کہا ٹھیک ہے بابا جی۔ ﻣﻐﺮﺏ ﮐﯽ ﻧﻤﺎﺯ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﺟﺐ ﺍﻧﺪﻫﯿﺮﺍ ﮨﻮﻧﮯ ﻟﮕﺎ ﺗﻮ ﻟﮍﮐﯽ ﮐﮯ ﺑﺎﭖ ﻧﮯ ﮈﺭﺍﺋﯿﻮﺭ ﺳﮯ ﺑﺲ ﺭﻭﮐﻨﮯ ﮐﻮ ﮐﮩﺎ ﺍﻭﺭ ﺳﺐ ﻣﺴﺎﻓﺮ مل کر لڈو کھانے لگے، ﻟﮉﻭ ﮐﻬﺎﺗﮯ ﮨﯽ ﺳﺐ ﻣﺴﺎﻓﺮ ﺳﻮ ﮔﺌﮯ ﮈﺭﺍﺋﯿﻮﺭ ﺍﻭﺭ ﮐﻨﮉﯾﮑﭩﺮ ﺟﺐ ﻧﯿﻨﺪ سے ﺟﺎگے ﺗﻮ ﺍﮔﻠﯽ ﺻﺒﺢ ﮐﮯ8 ﺑﺠﮯ ﺗﻬﮯ ﻣﮕﺮ ﺩﻟﮩﻦ ﺍﻭﺭ ﺩﻭﻟﮩﺎ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺩﻭ ﺑﺎﭖ ﻣﻮﻟﻮﯼ ﺻﺎﺣﺐ ﺍﻭﺭ ﻟﮉﻭ ﺑﺎﻧﭩﻨﮯ ﻭﺍﻻ ﺑﺲ ﺳﮯ ﻏﺎﺋﺐ ﺗﻬﮯ ﺍﺗﻨﺎ ﮨﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﻠﮑﮧ ﮐﺴﯽ ﻣﺴﺎﻓﺮ ﮐﮯ ﭘﺎﺱ ﻧﮧ ﮔﻬﮍﯼ ﻧﮧ ﭼﯿﻦ ﻧﮧ ﭘﯿﺴﮯ ﺑﻠﮑﮧ ﮐﭽﻬﮧ ﺑﻬﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﻬﺎ ﺍﻥ ﮐﻮ ﯾﮧ 6 ﻣﻤﺒﺮﺯ ﮐﺎ ﮔﺮﻭﭖ ﻣﮑﻤﻞ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﻟﻮﭦ ﭼﮑﺎ ﺗﻬﺎ۔

جب حضرت مہدی آئیں گے

دارالعلوم دیو بند کے دوسرے مہتمم گزرے ہیں، ان کا نام رفیع الدین تھا، بڑے صاحب حال اور صاحب کشف و کرامت بزرگ تھے، حرم تشریف لائے اور یہاں قیام کیا، اب ذرا سوچئے کہ ان کی سوچ کہاں پہنچی، ایک دن بیٹھے بیٹھے خیال آیا کہ نبی علیہ السلام نے بیت اللہ کی کنجی بنو شیبہ کو عطا کی تھی، یہ ایک قبیلہ ہے جن کے پاس پہلے سے یہ کنجی تھی،نبیؐ نے فتح مکہ کے بعد کنجی انہی کو دے دی اور فرما دیا کہ یہ کنجی قیامت تک تمہارے ہی قبیلہ میں رہے گی، یہ تصدیق بھی فرما دی، چنانچہ آج بھی بیت اللہ کی کنجی ان کے پاس ہے، اگر کوئی بادشاہ بھی آتا ہے تو دروازہ کھولنے کے لیے وہی خاندان بنو شیبہ کا بندہ آتا ہے اور وہ کنجی بردار دروازہ کھولتا ہے، تو شاہ

ہے، تو شاہ ہے، تو شاہ رفیع الدینؒ کے ذہن میں خیال آیا کہ یہ خاندان بھی مکہ مکرمہ میں ہی رہے گا، چنانچہ انہوں نے بیت اللہ کی کنجی بردار کے ساتھ دوستی لگائی، واقفیت بنائی، تعارف کیا، ہدیہ تحفہ دیا، بات چیت کی حتیٰ کہ چند دنوں میں آپس میں خوب انسیت اور محبت ہو گئی، جان پہچان ہو گئی، جب جانے کا وقت آ گیا تو اداس دل کے ساتھ جب ان سے ملنے لگے تو ان کا دل بھی اداس تھا کہا کہ اچھا آپ جا رہے ہیں، کوئی کام ہمارے ذمہ ہو تو بتائیے، ہم کیا کر سکتے ہیں؟ توجب انہوں نے یہ کہا تو فرمانے لگے کہ ہاں ایک کام ہے اگر آپ کر دیں تو؟ کون سا؟ وہ کام یہ ہے کہ یہ کچھ پیسے ہیں یہ تو آپ کے لیے ہدیہ ہے اور یہ ایک تلوارہے یہ امانت ہے
، کیا مطلب؟ جیسے چابی تمہارے خاندان میں چلتی رہے گی، یہ تلوار بھی امانت کے طورپر آپ اپنے خاندان کے حوالہ کر دیں، وہ اس تلوار کو بھی محفوظ رکھیں، جب حضرت مہدی آئیں گے اور آپ کے خاندان کا جو شخص ہوگا وہ جیسے ان کے لیے دروازہ کھولے گا میری طرف سے ان کو یہ تلوار کا ہدیہ پیش کر دے گا، اللہ اکبر!دیکھو محبت انسان کی سوچ کو کہاں لے جاتی ہے، یہ فرق ہے ہم میں اوراہل اللہ میں کہ ہم آتے ہیں اور عمرہ کیا اور فارغ، اب بازار ہے اور ہم طوافین اور طوافات ہیں، صبح شام بن داؤد کا طواف ہو رہا ہے اور جو اللہ والے ہیں ان کا دل حرم میں اٹکا رہتا ہے۔ یہ ہے

، کیا مطلب؟ جیسے چابی تمہارے خاندان میں چلتی رہے گی، یہ تلوار بھی امانت کے طورپر آپ اپنے خاندان کے حوالہ کر دیں، وہ اس تلوار کو بھی محفوظ رکھیں، جب حضرت مہدی آئیں گے اور آپ کے خاندان کا جو شخص ہوگا وہ جیسے ان کے لیے دروازہ کھولے گا میری طرف سے ان کو یہ تلوار کا ہدیہ پیش کر دے گا، اللہ اکبر!دیکھو محبت انسان کی سوچ کو کہاں لے جاتی ہے، یہ فرق ہے ہم میں اوراہل اللہ میں کہ ہم آتے ہیں اور عمرہ کیا اور فارغ، اب بازار ہے اور ہم طوافین اور طوافات ہیں، صبح شام بن داؤد کا طواف ہو رہا ہے اور جو اللہ والے ہیں ان کا دل حرم میں اٹکا رہتا ہے۔ یہ ہے
شوقِ تلاوت ہمارے قریبی رشتہ داروں میں سے ایک بزرگ تھے، عالم تھے، وہ کہنے لگے،جب میں اپنے حضرت سے بیعت ہواتو انہوں نے مجھے ایک قرآن پاک روزانہ تلاوت کا حکم دیا، خود مجھے فرمانے لگے کہ اس وقت مجھے بیعت ہوئے پینتالیس سال کا عرصہ گزر چکا، ان تینتالیس سالوں میں ایک دن میری تلاوت قضا نہیں ہوئی اگر یہ لوگ ایسے اعمال نامہ لے کر اللہ کے حضور پیش ہوں گے کہ تینتالیس سال میں ایک دن بھی قرآن پاک کا ایک پارہ پڑھنا اس میں ناغہ نہیں ہوا تو پھر سوچیں کہ ہم اس دن کیاکریں گے؟ کرنے والے آج کے دور میں بہت کچھ کر رہے ہیں، ہم نے تو دیکھا حفاظ کو بھی رمضانی حفاظ، بس رمضان آیا تو دن رات بھاگ دوڑ کرکے کچھ کرلیا اور اس کے بعد ان میں اورعام نوجوان میں کوئی فرق نہیں۔

بچوں کے سامنے بڑی بے دردی سے مارا

ایک شوہر نے اپنی بیوی کو اس کے بچوں کے سامنے بڑی بے دردی سے مارا جس سے بچے خوف زدہ ہوکر رونے لگ گئے۔ بچوں کا یہ حال دیکھ کر ماں رنجیدہ ہوگئی، جیسے ہی اس کے شوہر نے اس کے چہرے پر مارا تو روتے ہوئے کہنے لگی میں بچوں کی وجہ سے رورہی ہوں۔

اور پھر اچانک کہا کہ میں جا کر تیری شکایت کروں گی۔ جس پر شوہر نے کہا تجھے کس نے کہہ دیا میں تجھے باہر جانے کی اجازت دوں گا؟بیوی نے جواب دیا، کیا تیرا خیال ہے تو نے دروازے اور کھڑکیوں سمیت سارے کے دروازے بند کردیے ہیں؟ کیا اسی لئے تو مجھے شکایت کرنے سے روک لےگا؟شوہر نے انتہائی تعجب کے ساتھ کہا کہ پھر تم کیا کروگی؟بیوی نے کہا میں رابطہ کروں گی۔

شوہر نے جواب دیا کہ تیرے سارے موبائل میرے پاس ہیں اب جو تو چاہے کر۔جیسے ہی بیوی حمام کی طرف لپکی، شوہر نے سمجھا شاید یہ حمام کی کھڑکی سے بھاگنے کی کوشش کرے گی، اسی لیے بھاگ کر جلدی سے حمام کے باہر کھڑکی کے پاس کھڑا ہوکر انتظار کرنے لگا، جب اس نے دیکھا کہ یہ عورت نکلنے کی بالکل کوشش نہیں کررہی ہے

تو وہ واپس اندر آیا اور اور حمام کے دروازے کے پاس آکر کھڑا اس کے نکلنے کا انتظار کرنے لگا۔جب وہ حمام سے باہر نکلی تو چہرہ وضو کے پانی سے تر تھا اور لبوں پر بہت ہی پیاری سی مسکراہٹ سجارکھی تھی۔

اس عورت نے کہا، میں تیری صرف اس سے شکایت کروں گی جس کے نام کی تو قسم اٹھاتا ہے اس سے مجھے تیری بند کھڑکیاں تیرے مقفل دروازے اور موبائلوں کی ضبطگی سمیت کوئی بھی چیز نہیں روک سکتی، اور اس کے دروازے کبھی بند نہیں ہوتے ہیں۔شوہر نے اپنا رخ بدلا اور کرسی پر بیٹھ کر خاموشی کے ساتھ گہری سوچ میں ڈوب گیا۔

اندر جاکر بیوی نے نماز اداکی اور خوب لمبا سجدہ کیا،شوہر بیٹھا یہ سب دیکھ رہا تھا۔جب وہ نماز سے فارغ ہوکر بارگاہِ ایزدی میں دعا کے لئے اپنے ہاتھوں کو اٹھانے لگی تو شوہر اس کی طرف لپکا اور ہاتھوں کو پکڑ لیا، اور کہا کہ سجدے میں میرے لیے کی گئی بددعائیں کافی نہیں ہیں؟

عورت نے پرسوز لہجے میں کہا کہ تیرا خیال ہے کے میں اس سب کے بعد بھی جو تونے میرے ساتھ کیا ہے، اتنی جلدی اپنے ہاتھ نیچے کرلوں گی؟شوہر نے کہا کہ بخدا!یہ سب مجھ سے غصہ میں ہوا ہے میں نے قصداً نہیں کیا۔بیوی نے کہا اسی لئے میں تیرے لئے تھوڑی دعا پر اکتفا نہیں کرسکتی

یہ ایک نام پڑھ لیں

میرے بھائیو اورمیری بہنو امید کرتے ہیں کہ آپ سب اللہ پاک کے فضل کرم سے خیریت سے ہوں گے اﷲ تبارک و تعالیٰ کا مومنوں کو حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود وسلام بھیجنے کا حک حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پردرود بھیجنے کی کیفیت جو مجھ پر ایک دفعہ درود بھیجتا ہے اﷲ تعالیٰ اس پر دس مرتبہ درود (بصورتِ رحمت) درود بھیجتا ہے جس مجلس میں حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود نہ بھیجا گیا وہ قیامت کے دن ان اہل مجلس پر حسرت بن کر نازل ہو گی بدبخت ہے وہ شخص جس کے سامنے میرا ذکر ہو اور وہ مجھ پر درود نہ بھیجے ہر دعا اس وقت تک حجاب میں رہتی ہے جب تک حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود نہ بھیجا جائے۔

ناظرین حدیث شریف میں ہے اللہ غفور جمعہ کے روز کسی مسلمان کو نہیں چھوڑتا مگر اس کی بخشش کی جاتی ہے۔ اس کے علاوہ ناظرین جمعہ کا دن تمام دنوں کا سردار ہے اور سب سے افضل ہے حدیث شریف میں ہے اللہ تعالی کے نذدیک تمام دنوں سے افضل جمعہ کا دن ہے۔ ناظرین جمعہ کا دن تمام دنوں کا سردار ہے اور اس میں رحمت الٰہی کی بارش ہوتی ہے اور دوزخ کی آگ کو ٹھنڈا کیا جاتا ہے ناظرین آج ہم آپ کو ایک ایسا مجرب وظیفہ بتانے لگیں ہیں اور بہت آسان سا عمل بتانے لگے ہیں جس کے کرنے سے انشاء اللہ تعالی آپ کی جیسی بھی تنگی ہوگی کسی قسم کی بھی تنگی ہوگی رزق کی تنگی ہے مال کی تنگی ہے روزگار کی تنگی ہے اگر کوئی بھی تنگی ہے انشاء اللہ اس وظیفہ کو کرنے سے آپ کی وہ تنگی حل ہو جائے گی اس عمل کو آپ نے جمعہ کے دن کرنا ہے کسی بھی وقت فجر کی نماز سے لے کر مغرب کی ازان سے پہلے تک کسی بھی وقت یہ 100 مرتبہ آپ نے پڑھنا ہے اور ہر جمعہ کو آپ نے پڑھنا ہے اس عمل کی اجازت عام ہے۔ تو ناظرین کرنا یہ ہے کہ جمعہ کے دن فجر کی نماز سے لے کر مغرب کی ازان سے پہلے پہلے 100 مرتبہ آپ نے اللہ ھو پڑھنا ہے۔

صرف اللہ ھو اٹھتے بیٹھتے چلتے پھرتے کسی بھی وقت ایک تسبیح آپ نے اللہ ھو کی کرنی ہے اور ہر جمعہ کو آپ نے یہ تسبیح کرنی ہے آپ نے انشاء اللہ تعالی آپ دیکھیں گے کہ آپ کی تنگی کیسے دور ہوتی ہے مگر جمعہ کے دن آپ نے 100 مرتبہ اللہ ھو پڑھنا ہے اگر زیادہ بھی پڑھ سکتے ہیں تو زیادہ بہتر ہے مگر 100 مرتبہ آپ نے لازمی پڑھنا ہے انشاء اللہ تعالی ناظرین ظرور ہم سب کی تنگی دورفرمائے گا اللہ تعالی تو ناظرین کوشش کیا کریں جوبھی اچھی بات آپ کو ملے تو اسے شئیر ضرور کیا کریں کیونکہ اچھی بات کو شئیر کرنا صدقہ جاریا ہے۔

China Demands US Withdraw Sanctions on Tech Suppliers

China demanded Monday that Washington withdraw export sanctions imposed on Chinese companies in the latest round of a worsening conflict over technology, security and human rights.

The foreign ministry accused the Trump administration of interfering in China’s affairs by adding eight companies accused of playing roles in a crackdown in its Muslim northwestern region of Xinjiang to an export blacklist.

Washington also imposed controls on access to American technology for 24 companies and government-linked entities it said might be involved in obtaining goods with potential military uses.

The US decision “violated basic norms of international relations” and “harmed China ‘s interests,” said a ministry spokesman, Zhao Lijian.

“We urge the United States to correct its mistakes, revoke the relevant decision and stop interfering in China’s internal affairs,” Zhao said.

The measures announced Friday expand a US campaign against Chinese companies including tech giant Huawei that Washington says might be security threats.

Beijing criticised curbs imposed earlier on Huawei Technologies and other companies including Hikvision Digital Technology, a supplier of video security products. It has yet to say whether it will retaliate.

One company cited Friday in connection with Xinjiang is accused of “engaging in human rights violations,” the Commerce Department said. The rest are accused of “enabling China’s high-technology surveillance” in the region.

One of the technology suppliers, CloudWalk Technology, which makes facial recognition systems, said in a statement such “unfair treatment” will hurt American companies and global development.

China’s fledgeling tech industries are developing their own processor chips, software and other products. But they need US, European and Japanese components and technology for smartphones and other devices, as well as for manufacturing processes.

The company accused of human rights violations, Aksu Huafu Textiles, said in a statement the US decision “recklessly disregards facts.” The company said it won’t be affected because any American materials can be replaced by Chinese sources.

Other companies didn’t respond Monday to questions about how they might be affected.

The decision to add the companies to the Commerce Department’s Entity List limits their access to US components and technology by requiring government permission for exports.

American officials complain Beijing’s technology development is based at least in part on stolen foreign know-how and might erode US industrial leadership or threaten the security of its neighbours.

Complaints about Beijing’s technology ambitions prompted President Donald Trump to raise duties on Chinese imports in 2018, triggering a tariff war that weighs on global trade. The two governments signed a truce in January but Trump has threatened to back out if China fails to buy more American exports.

Other companies cited Friday “represent a significant risk of supporting procurement of items for military end-use in China,” the Commerce Department said.

The most prominent name on that list is Qihoo 360, a major supplier of anti-virus software and a web browser.

On its social media account, Qihoo 360 accused the Commerce Department of “politicising business” and commercial research and development.

Companies including Huawei that were targeted by earlier US sanctions deny they are a threat. Chinese officials accuse Washington of using phony security warnings to block rising competitors of US tech industries.

Another blacklisted company, CloudMinds Technology, a maker of internet-linked robots, said all its products “are designed for civilian use.” It appealed to the US government on its social media account to “stop this unfair treatment.”

بھلا کیسے؟

یونانی کہتے ہیں کہ عورت سانپ سے زیادہ خطرناک ہے۔ سقراط کا کہنا تھا کہ عورت سے زیادہ اور کوئی چیز دنیا میں فتنہ و فساد کی نہیں۔ بونا وٹیوکر کا قول ہے کہ عورت اس بچھو کی مانند ہے جو ڈنگ مارنے پر تلا رہتا ہے۔ یوحنا کا قول ہے کہ عورت شر کی بیٹی ہے اور امن و سلامتی کی دشمن ہے۔

رومن کیتھولک فرقہ کی تعلیمات کی رو سے عورت کلامِ مقدس کو چھو نہیں سکتی اور عورت کو گرجا گھر میں داخل ہونے کی اجازت نہیں۔ عیسائیوں کی سب سے بڑی حکومت رومتہ الکبریٰ میں عورتوں حالت لونڈیوں سے بدتر تھی، ان سے جانوروں کی طرح کام لیا جاتا تھا۔

یورپ کی بہادر ترین عورت جون آف آرک کو زندہ جلا دیا گیا تھا۔دورِ جاہلیت کے عربوں میں عورت کو اشعار میں خوب رسوا کیا جاتا تھا اور لڑکیوں کے پیدا ہونے پر ان کو زندہ دفن کر دیا کرتے تھے۔لیکن محسنِ انسانیت، رحمت اللعالمین حضرت محمد مصطفیٰ ﷺ کے عورت کے بارے میں ارشادات ملاحظہ فرمایئے:

٭قیامت کے دن سب سے پہلے میں جنت کا دروازہ کھولوں گا تو دیکھوں گا کہ ایک عورت مجھ سے پہلے اندر جانا چاہتی ہے تو میں اس پوچھوں گا کہ تو کون ہے؟وہ کہے گی میں ایک بیوہ عورت ہوں، میرے چند یتیم بچے ہیں۔

جس عورت نے اپنے رب کی اطاعت کی اور شوہر کا حق ادا کیا اور شوہر کی خوبیاں بیان کرتی ہے اور اس کے جان و مال میں خیانت نہیں کرتی تو جنت میں ایسی عورت اور شہید کا ایک درجہ ہوگا۔٭جو عورت ذی مرتبہ اور خوبصورت ہونے کے باوجود اپنے یتیم بچوں کی تربیت و پرورش کی خاطر نکاح نہ کرے وہ عورت قیامت کے دن میرے قریب مثل ان دو انگلیوں کے برابر ہے۔

٭ جس عورت نے نکاح کیا، فرائض ادا کیے اور گناہوں سے پرہیز کیا اس کو نفلی عبادات کا ثواب خدمتِ شوہر، پرورشِ اولاد، اور امورِ خانہ داری سے ملے گا۔٭جب عورت حاملہ ہوتی ہے تو اسے اللہ تعالیٰ کے راستے میں روزہ رکھ کر جہاد کرنے اور رات کو عبادت کرنے والی

(عورت) کے برابر ثواب ملتا ہے۔(بحوالہ: عورت اسلام کی نظر میں/صفحہ نمبر ۔91)